Welcome to NEWSFLASH, Your News link to Pakistan and beyond . . .
 

Urdu News Update

 

Newsflash
 

اردو رسائل و جرائد

 

Pakistan's premier  website that covers current affairs and news.

Readers Digest

Small house for sale in Rawalpindi

Hina Digest

ایک ایسا ملک جہاں وقت کی پابندی کو غیرمہذب سمجھا جاتا ہے

Time Magazine Subscription in Pakistan

 

Reader's Digest

 

 

 

آئی ایم ایف سے ملنے والی رقم کہاں خرچ ہو گی؟

عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) اور پاکستانی حکومت کے نمائندوں کے درمیان مذاکرات کے بعد چھ ارب ڈالر قرض کی فراہمی کا ابتدائی معاہدہ طے پا گیا ہے۔

 

مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے کہا کہ آئی ایم ایف پروگرام پر اس کے بورڈ کی جانب سے باضابطہ منظوری کے بعد عملدرآمد کیا جائے گا۔

اتوار کو سرکاری ٹی وی کو دیے گئے انٹرویو میں ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف پروگرام سے خسارے کے شکار سرکاری اداروں کے مسائل حل کرنے کے لیے سٹرکچرل اصلاحات اور برآمدات اور محصولات میں اضافے کا موقع ملے گا۔ انھوں نے کہا کہ پائیدار ترقی اور خوشحالی کے لیے آئی ایم ایف پروگرام پر کامیابی سے عملدرآمد اور سٹرکچرل اصلاحات اہم ہیں۔

آئی ایم ایف سے ملنے والی رقم کہاں خرچ ہو گی؟

پاکستان کے وزیر مملکت برائے خزانہ، محصولات و اقتصادی امور حماد اظہر نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ہمیں یہ قرضہ بنیادی طور پر ادائیگیوں کے توازن اور اس سے ملنے والی مدد کے لیے مل رہا ہے۔

A Special report on India's attempts to wish Kashmir issue away. Rs 50 in Pakistan

ذیابیطس: کیا ادویات کی بڑھتی قیمتیوں کی وجہ ڈالر کی قدر میں اضافہ ہے؟

ان کا کہنا تھا کہ اس رقم سے حکومت اپنے چند پرانے قرضوں کی ادائیگی کرے گی جن میں آئی ایم ایف کا بھی کچھ قرضہ شامل ہے۔

 

کیا چینی کمپنی پاکستان میں جاسوسی کر رہی تھی؟ بی بی سی رپورٹ

 

وزیر مملکت کے مطابق اس کے علاوہ اس رقم کو قرض پر سود کی ادائیگی کے ساتھ ساتھ، درآمدات کی فنانسنگ، کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کی فنانسنگ اور بجٹ میں مدد کے لیے بھی استعمال کیا جا سکتا ہے۔

 

قرض لے کر قرض اتارنے کے سوال پر وزیر مملکت حماد اظہر کا کہنا تھا کہ جب تک ہم اپنی معیشت میں سٹرکچرل اصلاحات نہیں کریں گے جس کا مطلب یہ ہے کہ وہ پیچیدہ اور بنیادی مسائل کا حل جنھوں نے آپ کی معیشت کی آمدن کو روک کر رکھا ہے تب تک آپ اپنا قرضہ واپس کرنے کی قابل نہیں ہوں گے۔

ان پیچیدہ مسائل کی نشاندہی کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ہمارا ملک برآمدات سے آمدن اکٹھی کرتا ہے۔ گذشتہ دس برسوں میں ہماری برآمدات بہت کم رہی ہیں جبکہ گذشتہ پانچ برسوں میں تو منفی رحجان دکھائی دیا ہے۔

وزیر مملکت کے مطابق ملک میں ٹیکس بیس کا بہت کم ہونا، زرمبادلہ کے ذخائر کا ہمیشہ نازک سطح پر رہنا اور سرکاری اداروں کا مسلسل نقصان میں رہنا ملکی معیشت کی حالت کے ذمہ دار عوامل ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ان سب کو ٹھیک کیے بنا حکومتی آمدن نہیں بڑھے گی اور پاکستان تب تک اپنے قرضے واپس نہیں کر سکتا۔

ان کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف پروگرام کے تحت مزید بہتری آئی گی اور حکومت کا مالیاتی خسارہ بھی نیچے آئے گا اور بیرونی خساروں کو بھی ایک توازن میں رکھا جائے گا۔

ماہر معیشت قیصر بنگالی نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس رقم سے حکومت ملک کے پرانے قرض اتارے گی۔

انھوں نے کہا کہ کافی عرصے سے پاکستان جو قرض لیتا ہے وہ صرف پرانے قرض ادا کرنے کے لیے استعمال کرتا ہے اور یہ بھی وہیں استعمال ہو گا۔

انھوں نے ملکی اداروں میں اصلاحات کے حکومتی بیانات کے بارے میں کہا کہ یہ ہوا میں باتیں ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ماضی میں بھی ایسے قرض لیے گئے اور ایسی ہی باتیں کی گئیں۔ انھوں نے مشیر خزانہ ڈاکٹر حفیظ شیخ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ سنہ 2008 سے 2013 تک وہ خود وفاقی وزیر برائے خزانہ تھے تب وہ یہ اصلاحات نہیں کر سکے تو اب وہ کیسے حالات ٹھیک کریں گے۔

پاکستان کے نئے مشیرِ خزانہ عبدالحفیظ شیخ کون ہیں؟

 

Post dated  May 14, 2019

 

Share your views at myopinion@newsflash.com.pk

 

فواد چوہدری: چاند دیکھنے کا تنازع اور حکومتی وزیر کی تجویز

پاکستان : موت کی سزا پانے والے ہر پانچ میں دو بے گناہ

 

 

Want to get news alerts from newsflash.com.pk? Send us mail at

editor.newsflash@gmail.com


Copyright 2006 the Newsflash All rights reserved

This site is best viewed at 1024 x 768